Zaat Be Nishan Novel By Samreen Sheikh Complete – ZNZ

Zaat Be Nishan Novel By Samreen Sheikh Complete – ZNZ

Download free web-based Urdu books, free internet perusing, complete in PDF, Zaat Be Nishan Novel By Samreen Sheikh Complete – ZNZ – Online Free Download in PDF, Novel Free Download, Online Zaat Be Nishan Novel By Samreen Sheikh Complete – ZNZ – Online Free Download in PDF, And All Free internet based Urdu books, books in Urdu, heartfelt Urdu books, You Can Download it on your Portable, PC and Android Cell Phone. In which you can without much of a stretch Read this Book. Zaat Be Nishan Novel By Samreen Sheikh Complete – ZNZ , We are Giving the PDF document on the grounds that the vast majority of the clients like to peruse the books in PDF, We make an honest effort to make countless Urdu Society, Our site distributes Urdu books of numerous Urdu journalists.

Zaat Be Nishan Novel By Samreen Sheikh Complete – ZNZ
نکل جاؤ یہاں سے دانیہ جتوئی۔۔۔
ن۔نہیں ۔۔۔نہیں کہیں نہیں جاؤں گی۔۔۔۔۔ سائیں۔۔!!! ایسے مت کریں۔۔۔ اپنے بیٹے کو دیکھیں پانچ سالہ داؤد کو گود میں اٹھائے وہ روتی تڑپتی اپنے سفاک شوہر کے ترلے منتوں پر اتر آئیں۔
یہ ابھی تک گئی نہیں یہاں سے۔۔۔ ہم بتا رہے ہیں یہاں تو آپ کی پہلے بیوی اور بیٹا اس گھر میں رہے گا یاں پھر میں۔۔
مت کریں میرے ساتھ ایسا میں کہا جاؤں گی۔ داد جی برداشت نہیں کرسکیں گی۔ رحم کریں سائیں ۔۔۔۔میں ۔۔۔میں ایک کونے میں پڑی رہوں گی۔۔۔۔ خدا کے لیے مجھے اپنی زندگی سے یوں بے دخل مت کریں۔ سائیں ہم۔۔ہمارا۔۔۔۔داود آپ کا بیٹا۔
اماں سائیں آپ کا پوتا۔۔ دانیہ جتوئی روتے بلکتے داؤد کو اماں سائیں کے قریب لے کر گئیں۔ اماں سائیں کرب سے آنکھیں موند گئیں۔ وہ کچھ نہیں کر سکتی تھی اس گھر میں تو مرد ذات کی چلتی تھی وہ چاہ کر بھی کچھ نہ کر سکی تھیں۔ شوہر کے انتقال کے بعد اب تو بالکل بھی نہیں۔
رانیہ پتر اپنی اماں سائیں کو معاف کردے۔
ن۔نہی۔۔نہیں اماں سائیں آپ میرا آخری سہارا ہیں آپ سائیں سے بات کریں وہ کرلیں دوسری شادی میں نہیں روکوں گی۔ مگر مجھے یوں اس گھر سے اپنی زندگی سے بے دخل مت کریں۔
علیم سائیں آپ طلاق کیوں نہیں دے رہے اسے ۔۔!!!!
نہیں ۔۔۔نہیں منزہ سائیں میرے ساتھ یہ ظلم مت کریں۔
جلدی کریں۔۔۔ سائیں!!! منّزہ بیگم نے رانیہ کو روتے دیکھ کر بے زاری سے کہا۔ اپنی نئی نویلی بیگم کے چہرے کی بے زاری پڑھ کر انھوں نے آخری فیصلہ لیا۔
دانیہ جتوئی میں تمھیں طلاق دیتا ہوں۔ طلاق دیتا ہوں۔
طلاق دیتا ہوں۔ اپنی شکل لے کر یہاں سے غائب ہوجاؤ اور اپنے بیٹے کو بھی اور کبھی آئندہ اس در میں واپس نہ آنا۔

 

790+ Pages · 2023 · 9.52 MB · Urdu

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *